صائمہ آفتاب

...

صائمہ آفتاب

محترمہ صائمہ آفتاب (لاہور)کسی بھی گھر کا علمی وادبی ماحول بچوں پر یقیناًاثر انداز ہوتا ہے اپنے عہد کے ادبی شخصیت و معروف بیوروکریٹ (ریٹارئرڈ)آفتاب احمد شاہ صاحب کی صاحبزادی محترمہ صائمہ آفتاب کو اپنے بچپن سے ہی گھر میں علمی و ادبی ماحول میسر ہونے کی وجہ سے شعروشاعری اور صوفیانہ کلام سے آشنائی رہی والد محترم کی خصوصی شفقت اور علمی و ادبی گھریلو ماحول نے ان کے ذوق ِ ادب کو جلا بخشی یہی وجہ تھی کہ محترمہ صائمہ آفتاب دوران تعلیم کالج لیول پر جہاں علمی و ادبی تقریبات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتی رہیں وہاں انٹر کالجز مشاعرہ جات میں بھی اپنا بھرپورکردار ادا کیا- کئنیرڈ کالج لاہورسے اپنی تعلیم سفر کے دوران کالج میگزین کی ایڈیٹرکی ذمہ دای بھی نبھائی ۔ ملک پاکستان کے سب سے بڑے مقابلے کے امتحان یعنی سی ایس ایس (سیشن 1999 ء ) میں کا میابی کے بعد پاکستان کسٹم گروپ میں سلیکٹ ہوئیں آج کل بطور ایڈیشنل کلکٹر اپنی خدمات لاہور میں سرانجام دے رہی ہیں ۔ ملک وال سے تعلق رکھنے والی محترمہ صائمہ آفتاب اوائل عمری میں حصول ٰتعلیم، شادی اور پھر سی ایس ایس کی کامیابی کے بعد اپنی پیشہ وارانہ اور گھریلو ذمہ داریاں نبھاتے ہوئے ادبی دنیاسے بظاہردو ررہیں مگرشاعری سے فطری میلان اور موزوں طبع ہونے کے باعث اپنے طور پر شہر سخن سے منسلک رہیں۔وقت کے بدلتے ہوئے رُحجان میں سوشل میڈیا ان کے کلام کو منظر عام پر لانے میں نا صرف معاون ہوا بلکہ محترمہ صائمہ آفتاب ادبی حلقوں میں بھی اپنی مصروفیت سے وقت نکال کا شامل ہونے لگیں ۔ان کا پہلا شعری مجموعہ طباعت کے مراحل میں ہے ۔