ادبی تنظیم "کن" کے زیر اہتمام تیسرا تنقیدی اجلاس


01-Jan-2018

post1



ادبی تنظیم کُن کی طرف سے رحیم یار خان میں تنقیدی نشستوں کا جو سلسلہ شروع ہوا اس کی ایک اور کڑی، ایک اور نشست یکم جنوری 2018 بروز سوموار چناب کمرشل سینٹر رحیم یارخان میں منعقد ہوئی جس کی صدارت رحیم یار خان کے انتہائی خوبصورت شاعر جناب آفتاب یا سر صاحب نے فرمائی اور مہمان خصوصی بہاولپور کے نوجوان شاعر جناب خرم آفاق صاحب تھے۔ تلاوت کلام پاک سے باقاعدہ آغاز کیا گیا جس کی سعادت الطاف ملک کے حصے میں آئی تلاوت کے بعد پچھلے اجلاس کی کاروائی پڑھ کر سنائی گئی اس کے بعد تنقیدی نشست شروع ہوئی جس میں نوجوان شاعر شہام شاہد نے اپنی غز ل تنقید کے لئے پیش کی ۔ تمام شعرا کرام نے غزل کے عیوب و محاسن پر بات کی اور نوجوان کی دوسری غزل اور خوبصورت تخلیق پر مبارکباد دی ۔ صدر محفل نے نوجوان شاعر کی تخلیق کو سراہا اور کہا کہ یہ غزل شاعر کی مستقبل میں ایک اچھے شاعر ہونے کی دلیل ہے اس کے بعد محفل مشاعرہ کا انعقاد کیا گیا جس میں الطاف ملک، شہام شاہد، شہباز پدم، کاشف نواز، مژدم خان، عمیر نجمی، مرزا فیصل، شہباز نئیر،خاور اسد، اجمل فرید، اور آفتاب یاسر نے اپنا کلام سنایا ۔ یہ پوری کاروائی سوشل میڈیا پہ براہ راست چلائی گئی اور نشست اختتام پزیر ہوئی ۔





مصنف کے بارے میں


...

کن

01/12/2017 - | Rahim Yar Khan


ادبی تنظیم کُن رحیم یار خان سے تعلق رکھنے والے آٹھ نوجوان دوستوں کی اختراع ہے جس کی سرپرستی جناب اجمل فرید صاحب کر رہے ہیں۔ یکم دسمبر 2017 سے اپنے سفر کا باقاعدہ آغاز کرنے والی اس تنظیم کا واحد مقصد رحیم یار خان میں ادبی جمود کو توڑنا ہے اور رحیم یار خان سمیت پاکستان بھر کے نوجوان شعراء اور تمام فنونِ لطیفہ سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کو ایک ادبی پلیٹ فارم تک رسائی دینا ہے۔ جمہوری انداز میں رائے شماری کے بعد تنظیمی ڈھانچہ اس طرح ہے کہ اس تنظیم کی صدارت عمیر نجمی کے پاس ہے۔ تنظیم کے جنرل سیکرٹری الطاف ملکؔ، فنانس سیکرٹری شہام شاہد اور انفارمیشن سیکرٹری کاشف نواز ہیں ۔ تنظیم کے اس سفر کے باقی قافلے میں مژدم خان، شہباز پدم اور عمر خان شامل ہیں۔




Comments