حق شکر خورے کوں دیتا ہے شکر



مجھ کوں پہنچی اس شکر لب کی خبر
حق شکر خورے کوں دیتا ہے شکر

بو علی سینا اگر دیکھے اسے
قاعدے حکمت کے سب جائے بسر

سات پردوں میں رکھوں اس کوں چھپا
آوے گر انکھیاں میں وہ نور ِ نظر

اس لباں کا اے ولی! طالب ہے دل
جس کے غم میں لعل ہے خونیں جگر







مصنف کے بارے میں


...

ولی محمد ولی

1667 - 1725 | Deccan


ولی دکنی اردو غزل کے رجحان ساز کلاسک شاعروں کی اولین صف میں ہیں




Comments