فقط خیال سے جاتا ہے راستہ اس کا



ہر اک سے پوچھتا پھرتا ہوں میں پتہ اس کا
ملے گا کوئی تو لوگوں میں آشنا اس کا

اسے نثر میں بھی لکھنا رہا نہیں ممکن
کہاں سے ڈھونڈ کے لاؤں میں قافیہ اس کا

یہ دور اب بھی کرشموں کا منتظر ہے سو
جگا رہا ہوں میں سویا ہوا عصا اس کا

جسے تُو ڈھونڈتا پھرتا ہے ان خلاؤں میں
فقط خیال سے جاتا ہے راستہ اس کا

وہ مجھ سے بات کرے گا مرے قبیلے کی
سمجھ میں آئے گا یوں بھی تو سلسلہ اس کا

وہ ایک شخص جو دکھتا ہے آئینے میں مجھے
چراغ جلتا ہے خلوت میں جابجا اس کا

خدا سے ملنے کو آیا ہوں ساتویں جانب
کہ شش جہات کا مرکز ہے حاشیہ اس کا






مصنف کے بارے میں


...

اسامہ منیر

07-08-2000 - | سرگودھا


اگست 2000 کو سرگودھا میں پیدا ہوئے۔ میٹرک 2016 میں کیڈٹ کالج سکردو سے کیا۔ ایف-ایس-سی 2018 میں ریڈر کالج سرگودھا سے کی۔ آپ اس وقت جامعہ سرگودھا میں ایل-ایل-بی کے طالبعلم ہیں۔




Comments