وہاں کچھ دیر جانا پڑ گیا تھا



وہاں کچھ دیر جانا پڑ گیا تھا 
ہمیں  ملنا  ملانا   پڑ  گیا  تھا 

یقیں کرتا نہیں تھا عشق پر میں 
یہ جادو  آزمانا  پڑ  گیا  تھا 

اسے بھی لوگ اچھے مل گئے تھے 
مجھے پردیس جانا پڑ   گیا   تھا 

تری   جانب  یقیناً   لوٹ    آتا 
کسی کا غم  اٹھانا  پڑ  گیا  تھا 

تمہاری یاد جاتی ہی نہیں تھی 
مجھے ہی جاں سے جانا پڑ  گیا  تھا 

مبشر متین





مصنف کے بارے میں


...

مبشر متین

1993 - | Lahore


مبشر متین 1993 گوجرانوالہ پاکستان میں پیدا ہوۓ۔2014 میں شعر گوئی شروع کی۔جامعہ دار العلوم الاسلامیہ اقبال ٹاؤن لاہور سے تجوید،قراتِ سبعہ عشرہ اور درسِ نظامی کیا۔علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی سے بی ایڈ اور پنجاب یونیورسٹی سے ایم اے اردو کی ڈگری حاصل کی اور اب اورینٹل کالج لاہور سے ایم فل اردو کر رہے ہیں۔




Comments