آخری خط میں اسے میں نے لکھا‏ میں خوش ہوں



آخری خط میں اسے میں نے لکھا‏ میں خوش ہوں

تو نے جانا ھے اگر چھوڑ کے جا میں خوش ہوں
جو ہو افسردہ اسے بھر کے تو ساغر دے دے.
ساقیا پر مجھے آنکھوں سے پلا میں خوش ہوں.
اے میرے دوست مجھے اور دلاسے مت دے
میں نے اک بار تجھے کہہ تو دیا میں خوش ہوں
حمزہ یعقوب مجھے تجھ‏ سے گلا کوئ نہیں
جو ترے بس میں تھا وہ تو نے کیا میں خوش ہوں

حمزہ یعقوب





مصنف کے بارے میں


...

حمزہ یعقوب

25-11-1999 - | Rohilanwali, Muzaffar Garh


حمزہ یعقوب کا تعلق مظفرگڑھ کے مضافاتی قصبے روہیلانوالی سے ہے۔ آج کل ایف ایس سی پری میڈیکل میں امتیازی نمبروں سے کامیابی کے بعد شعبہ تدریس سے وابستہ ہیں۔ ٢٠١٥ میں شاعری کا آغاز کیا۔ اصنافِ سخن میں غزل سے زیادہ لگاؤ ہے۔ پسندیدہ شعراء میں غالب، میر تقی میر، احمد فراز، جون ایلیاء اور جمال احسانی شامل ہیں۔




Comments