بس ایک دن کیلۓ بھی نہیں بنی مرے ساتھ....عابد ملک



بس ایک دن کیلۓ بھی نہیں بنی مرے ساتھ
گزارنے کوئی آیا تھا زندگی مرے ساتھ

سنا رہا ہوں۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کسی اور کو کتھا اپنی
کھڑا ہوا ہے کوئی اور آدمی مرے ساتھ

سفر میں پیڑ کا سایا نہیں ملے گا مجھے
بس اتنا سنتے ہی دیوار چل پڑی مرے ساتھ

وہ مجھکو پہلے بھی تنہا کہاں سمجھتا تھا
پھر اس نے میری اداسی بھی دیکھ لی مرے ساتھ

سنا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔حال بتانے سے درد گھٹتا ہے
سو ایک روز چراغوں نے بات کی مرے ساتھ

الاءو جلتا رہا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جب تلک میں چلتا رہا
میں رک گیا تو کہانی بھی رک گئی مرے ساتھ
  





Comments