میں چاہتا ہوں



میں چاہتا ہوں اس کے ساتھ چلنا

ان راستوں پر جہاں دکھائی پڑیں 

کشادہ کچھاروں سے نکلتے چوکنا شیرمیمنوں کو دبوچ لینے کو تیار بھیڑیےفاختاوں کے گھونسلوں پہ جھپٹی چیلیںبطخوں کے انڈوں کی بو پہ لپکتے سانپ

میں چاہتا ہوں اس کے ساتھ چلنا

بے خوف و خطر، سہمے ہوئے راستوں پرآئس کریم پیتے، قہقہے اچھالتےڈزنی دنیا سے باہر چٹخنی گراتے ہوئے





Comments