قومی عشرہ




اندر باہر موت پڑی ہے تیرے سر پر کھاٹ
ہانپتی کیا ہے نیند کی کتیا! ماں کے تلوے چاٹ
جاگ رے بدھو، مرتا کیا ہے، ساتھ ہمارے ڈر
جلدی کاہے کی ہے پگلے دھیرے دھیرے مر
دروازوں میں چیخیں چٹخیں ویرانی کے بھوت
جھینگر نامعلوم جگہ سے ڈھویا کریں سکوت
اندھی گولی رستہ پوچھے کس کے سر بھیجوں
وقت نہیں ہے جلدی بولو کیا کہہ کر بھیجوں
تیرا مَرا ہے تیری باری اپنا سینہ پیٹ
میری باری ابھی نہیں ہے ڈونٹ ڈئیر ٹو چِیٹ





Comments